’اسامہ بن لادن کے بچھڑ جانے سے میرے ۔ ۔ ۔‘ القاعدہ کے سابق سربراہ کی والدہ پہلی بار منظرعام پر، داستان حیات سنادی

0
126
osama-bin-laden-mother

لندن(پاکستان ٹوئنٹی فورسیون نیوز)اسامہ بن لادن دنیا کا وہ کردار ہے جس نے عالمی تاریخ پر انمٹ نقوش چھوڑے ہیں جنہوں نے مختلف ممالک کی ترجیحات کا رخ بدل کر رکھ دیا۔ ان کے متعلق ان کا خاندان آج تک خاموش رہا تاہم اب پہلی بار ان کی والدہ منظرعام پر آ گئی ہیں اور ایسا انکشاف کر دیا ہے کہ دنیا دنگ رہ گئی۔

اسامہ بن لادن کی والدہ غانم نے پہلی مرتبہ اسامہ بن لادن کے بارے میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہاہے کہ اسامہ بہت اچھا لڑکا تھا اس کے بچھڑ جانے سے میری زندگی مشکلات کاشکار ہوگئی ہے۔ گارڈین نے یہ رپورٹ دیتے ہوئے لکھا ہے کہ اسامہ کی 70سالہ والدہ نے اپنے گھر میں بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ وہ بہت اچھا لڑکا تھا مجھ سے بہت محبت کرتا تھا، غانم نے بتایا کہ وہ میرا پہلا بیٹا تھا اور اس کی پرورش میرے دوسرے شوہر محمد العطاس نے کی تھی وہ بھی اس سے بہت محبت کرتے تھے، 20 سال کی عمر تک وہ مضبوط اور متقی انسان تھا اس نے کنگ عبدالعزیز یونیورسٹی جدہ میں اکنامکس کی تعلیم حاصل کی اور یونیورسٹی میں حصول تعلیم کے دوران ہی اسے انتہا پسند بنایا گیا اس کا برین واش کرکے اسے مجاہد بنادیاگیا۔

My-son-Osama-the-al-Qaida-leader-mother-speaks-for-the-first-time

یونیورسٹی نے اسے تبدیل کرکے رکھ دیا یونیورسٹی کے لوگوں نے اسے بالکل بدل ڈالا، یونیورسٹی میں اس کی ملاقات عبداللہ عظام نامی ایک شخص سے ہوئی جو اخوان المسلمین کا رکن تھا جسے بعد میں سعودی عرب سے نکال دیاگیاتھا اوروہ اسامہ کاروحانی مشیر بن گیاتھا غانم نے کہا کہ کچھ لوگوں سے ملنے سے قبل وہ بہت پیارا لڑکا تھا ، 20 سال کی عمر میں اس کابرین واش کردیاگیا، اسامہ کے بھائی حسن نے کہا کہ سعودی حکومت بھی اسامہ کابہت احترام کرتی تھی ہمیں ان پر بہت فخر تھا، انھوں نے مجھے بہت کچھ سکھایا، وہ عالمی افق پر مشہور ہوئے،غانم نے کہا کہ سکول کے زمانے میں وہ پڑھائی میں بہت تیز اور اچھاتھا وہ تعلیم میں دلچسپی لیتاتھا اس نے اپنی تمام دولت افغانستان میں خرچ کردی وہ تجارت کے بہانے اپنے گھر سے نکلا تھا جب ان سے پوچھا گیا کہ اس کی اصلیت معلوم ہونےپر آپ کاتاثر کیاتھا تو غانم نے کہا کہ ہم بہت اپ سیٹ تھے میں نے کبھی ایسا سوچا بھی نہیں تھا ۔ میں کبھی نہیں چاہتی تھی کہ ایسا ہو ۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here