شہد کی اہمیت، طب نبوی کی روشنی میں

0
38
honey-pakistan247news

یوں تو ہم سے ہر ایک شہد کی اہمیت کے بارے میں کچھ نہ کچھ جانتا ہے لیکن طب نبوی میں شہد کی افادیت و اہمیت کیا ہے آپ اس حدیث سے اندازہ کر سکتے ہیں۔
حضرت ابو ہریرہ روایت کرتے ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ والہ وسلم نے ارشاد فرمایا کہ”جو شخص ہر مہینے تین دن تک صبح شہد چاٹے ،تو اسے کوئی بڑی مصیبت نہیں پہنچے گی۔
ایک اور حدیث میں نبی کریم صلی اللہ علیہ و الہ وسلم نے ارشاد فرمایا: دو باعثِ شِفاء چیزوں کو لازمی پکڑ لو ، 1۔ شہداور2۔قرآن۔(سنن ابن ماجہ)
اس کے علاوہ امّ المومنین حضرتِ عائشہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ فرماتی ہیں کہ آقائے دو جہاں صلی اللہ علیہ والہ وسلم کو میٹھی چیز اور شہد مرغوب تھا۔(صحیح بخاری)
اللہ تعالی کی انسان کو عطا کی گئی لا تعداد نعمتوں میں سے ایک شہد بھی ہے۔ شہد ایک مکمل غذا کے ساتھ ساتھ اس میں موجود طبی فوائد کی موجودگی کی وجہ سے ایک بیش قیمتی دوا بھی ہے۔شہد کا شمار دنیا کی قدیم ترین غذاو¿ں کے ساتھ ساتھ قدیم ترین دواو¿ں میں بھی ہوتا ہے اور اس کی تصدیق آج کی سائنس بھی کر رہی ہے۔شہد طب کے لحاظ سے بہت ساری اہم بیماریوں کا علاج بھی ہے۔ شہد غذا کے طور پر کھائیں یا دواءکے طورپر ، دونوں صورتوں میں فائدہ مندہی ہے بلکہ آپ اسے کسی بھی دوا میںشامل کر کے بھی کھا سکتے ہیں۔
شہد کو اگر طبی لحاظ دیکھا جائے تو یہ گردوں، اعصاب، معدہ، دل اور دماغ کو تقویت دیتا ہے، جسم کی ٹوٹ پھوٹ کی مرمت کرتا ہے۔ جسم کی فالتو چربی اور بڑھے ہوئے پیٹ کو کم کرتا ہے۔ زہر کے اثرات دور کرنے میں مدد دیتا ہے۔ سر اور سینہ کے امراض کیلئے مفید ہے۔ جگر کاورم دور کرنے کے ساتھ ساتھ معدے ، جگر، باہ ، جسمانی تھکاوٹ اور جسمانی کمزور کرنے کیلئے بہترین ٹانک ہے۔
بصارت کو طاقت دیتا ہے جبکہ بالوں میں لگانے سے جوو¿ں کو مارتا اور ان کی بڑھوتری کو روکتا ہے۔ شہد بلغم اور ردی رطوبتیں نکالنے کے ساتھ ساتھ نظام انہضام کوبھی درست رکھتا ہے۔اس کے علاوہ شہد پیاس کو بجھاتا ہے اور پتھری کو نکالنے میں مدد دیتا ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here