کوئٹہ ایک بار پھر دہشگردی کا نشانہ بن گیا، ہزار گنجی کے قریب فروٹ منڈی میں دھماکہ،2 بچوں سمیت18 افراد شہید جبکہ 48 زخمی

0
48
bomb-blast-quetta-pakistan

کوئٹہ (پاکستان247نیوز) کوئٹہ کے علاقے ہزار گنجی میں واقع فروٹ مارکیٹ میں دھماکے کے نتیجے میں 2 بچوں اور ایک ایف سی اہلکار سمیت 18 افراد جاں بحق اور 48 شدید زخمی ہو گئے، سکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا جبکہ ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کر دی گئی. وزیراعظم عمران خان ،وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال اور وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدارنے دھماکے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے ۔وزیراعظم نے حکام سے کوئٹہ دھماکے کی رپورٹ طلب کرلی ،وزیراعظم کی زخمیوں کوبہترین طبی امدادکی فراہمی کی ہدایت کردی۔.

کوئٹہ میں دہشت گردوں نے ایک بار پھر بزدلانہ کارروائی کی، ہزار گنجی کے قریب سبزی منڈی میں ہونے والے دھماکے میں 18 افراد جاں بحق اور 48 زخمی ہوگئے۔ بتایا گیا ہے کہ دھماکہ سبزی منڈی میں ایک گاڑی کے قریب ہوا جس نے ہر طرف تباہی مچا دی۔ دھماکے سے سبزیاں اور فروٹ دور دور تک بکھر گئے اور قریبی دکانوں کو شدید نقصان پہنچا۔دھماکے کے بعد بم ڈسپوزل سکواڈ اور ریسکیو ٹیمیں موقع پر پہنچ گئیں، زخمیوں اور لاشوں کو ایمولینس کے ذریعے ہسپتال منتقل کیا۔ کئی زخمیوں کی حالت کی تشویشناک بتائی گئی ہے جس سے ہلاکتیں بڑھنے کا خدشہ ہے۔دھماکے کے بعد ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی اور لوگوں سے خون کے عطیات کی اپیل بھی کی گئی ہے۔ سیکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا۔ دھماکے کی جگہ سے شواہد اکٹھے کئے جا رہے ہیں۔دوسری جانب ہزارہ برادری نے 8 افراد شہید ہونے پر دھرنا دے دیا۔

سابق وزیراعظم نوازشریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز نے بھی کوئٹہ میں ہونے والے بم دھماکے کی سخت مذمت کی ہے۔

 

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here