تنوشری دتہ کا نانا پاٹیکر پر جنسی ہراسانی کا الزام ، فیصلہ سنا دیا گیا

0
42
tanushree-dutta-and-nana-patekar.jpeg

ممبئی(پاکستان247نیوز) بالی ووڈ اداکارہ تنوشری دتہ کا ناناپاٹیکر پر جنسی ہراسانی کا الزام پر پولیس نے ناکافی ثبوت کی بنا پر ناناپاٹیکر کو کلین چٹ دے دی۔

تفصیل کے مطابق بالی ووڈ میں می ٹو مہم نے بہت زور پکڑ رکھا ہے جس میں ایک کیس اداکارہ تنوشری دتہ کا ناناپاٹیکر پر جنسی ہراسانی کا الزام تھا جو کہ گزشتہ برس لگایا گیا تھا اور تنوشری دتہ نے ناناپاٹیکر کے خلاف پولیس میں شکایت بھی درج کی تھی تاہم ممبئی پولیس نے نانا پاٹیکر کو اس کیس میں کلین چٹ دیتے ہوئے کیس بند کردیا۔ پولیس کا کہناہے کہ انہیں ناناپاٹیکر کے خلاف کوئی  ٹھوس ثبوت نہیں ملا ہے اور اسی وجہ سے مزید تحقیقات ممکن نہیں ہے۔

اداکارہ تنوشری دتہ اس کیس کے فیصلے سے خوش نہیں ہیں ان کا کہنا ہے کہ یہ بہت ہی برا ہوا کیونکہ نانا پاٹیکر کافی عرصے سے کلین چٹ ملنے کی کوششوں میں لگے ہوئے تھے۔ تنوشری نے کہا میں پہلے بھی کہہ چکی ہوں ہمارے گواہوں کو دھمکی آمیز فون کالز موصول ہوئی تھیں اور ان پر دباؤ ڈالا جارہا تھا کہ وہ اپنے بیانات پولیس کو ریکارڈ نہ کروائیں۔ ہمارے 10 گواہ تھے جن میں سے صرف ایک یا دو کے بیانات ریکارڈ ہوئے۔ دیگر گواہ دھمکیوں کے باعث سامنے ہی نہیں آئے۔

ادھر تنوشری کے وکیل نتین ساتپوتے نے کہا کہ مذکورہ معاملہ میں پولیس کی کارروائی کو عدالت میں چیلنج کیا جائے گا ۔ اگر پولیس عدالت میں بی یا سی کلاسیفکیشن رپورٹ پیش کرتی ہے ، تواس کا آخری ہونا ممکن نہیں ہے ۔ ہم عدالت میں اس کی مخالفت کریں گے اور سماعت کے دوران جرح کے بعداگر عدالت مطمئن ہوئی تو ٹھیک ہے ورنہ عدالت پولیس کو دوبارہ جانچ کی ہدایت دی سکتی ہے۔

واضح رہے کہ تنوشری دتہ نے 2018 میں نانا پاٹیکر پر جنسی ہراسانی کا الزام لگایا تھا کہ 2008 میں ان کے ساتھ فلم’’ہارن اوکے پلیز‘‘کے ایک گانے کی شوٹنگ کے دوران نازیبا حرکتیں کی گئی تھیں ۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here