محبوب کی جاسوسی کیلئے ایسی اپیلی کیشن آ گئی کہ کوئی سوچ بھی نہ سکتا تھا، یہ کرتی کیا ہے؟ لوگوں نے دھڑا دھڑ ڈون لوڈ کرنا شروع کر دی

0
77

نیویارک(پاکستان 247نیوز) جوڑوں کو اکثر اپنے ہمسفر سے شکایات رہتی ہیں اور کبھی کبھی تو یہ شکایات یہاں تک پہنچ جاتی ہیں کہ وہ ایک دوسرے پر شک کرنا شروع کر دیتے ہیں تاہم اگر یہاں یہ بات کی جائے کہ دنیا میں ہر چیز کا علاج موجود ہے لیکن شک کا نہیں تو غلط نہ ہو گا ۔

اب ایک نیا تنازع کھڑا ہو گیا ہے کیونکہ غیر ملکی میڈیا میں خبریں گردش کر رہی ہیں کہ ایپلی کیشن سٹور میں ایک ایسی ایپ موجود ہے جس کے ذریعے لوگ ایک دوسرے کی جاسوسی کر سکتے ہیں اور یہ اس قدر موثر ہے کہ اس کے ذریعے ایک دوسرے کی کالز ، پیغامات ، واٹس ایپ اور سنیپ چیٹ کی بھی جاسوسی کی جا سکتی ہے ۔ اس ایپ کا نام دراصل mSpy ہے جو کہ سالانہ 26 ہزار روپے فیس پر دستیاب ہے اور اس کی فروخت کیلئے ایپل اور گوگل اس کو بنانے والوں کی مدد بھی کر رہے ہیں۔

اس ایپ کو بنانے والوں کا دعویٰ ہے انہوں نے یہ ایپ دراصل والدین کیلئے بنائی تھی تاکہ وہ اپنے بچوں کی نگرانی کر سکیں اور ان کا خیال رکھ سکیں لیکن اب انکشاف ہوا ہے اس ایپ کا بڑے پیمانے پر استعمال جوڑے کر رہے ہیں اور اپنے ہمسفر کی بے وفائی کو پکڑنے کی کوشش کر رہے ہیں ۔ اس کے علاوہ پلے سٹور پر ایک اور ایپ بھی موجود ہے جو کہ یہ کام کرتی ہے اور اس کا نام ریموٹ سپائے ہے اور اس کی ماہانہ فیس 20 پاونڈ ہے جو کہ تقریبا 3500 روپے بنتی ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here