جیونیوز کی خوش ادا ،خوش مزاج اینکر حفظہ چوہدری کی نجی زندگی کی وہ باتیں جو آپ نہیں جانتے

0
494
Geo-News-anchor-Hifza-chaudhary-lahore

کراچی (پاکستان 247نیوز) ٹی وی سکرین پر نظرآنیوالی خواتین کے مداحوں کی تعداد بھی لاکھوں میں ہوتی ہے اور اکثر لوگ ان کے بارے میں جاننے کیلئے بے تاب رہتے ہیں ، اب جیونیوز کی خوش ادا اینکر حفظہ چوہدری کی زندگی کی وہ باتیں بھی سامنے آگئی ہیں جو شاید آپ کو معلوم نہیں ۔

یہ بھی پڑھیں:چینی انجینئر نے رائیونڈ کی لڑکی کو دلہن بنالیا

اپنے ہی ادارے کے سنڈے میگزین کو دیے گئے خصوصی انٹرویو میں لاہور کی حفظہ چوہدری نے بتایاکہ ان کے والد بشیر احمد بزنس مین اور والدہ رفیعہ بشیر گھریلوخاتون ہیں،ابتدائی تعلیم کیتھڈرل سکول، مال روڈ لاہور ، پھر یوایم ٹی سے میڈیا مینجمنٹ میں ماسٹرز کیا۔انہوں نے کہاکہ میں نے کبھی خود کو یہ احساس ہی نہیں ہونے دیا کہ میں مردوں کی سوسائٹی میں ہوں، ہم دس بہن بھائی ہیں اور میرا نمبر ساتواں ہے۔ مجھ سے بڑی تین بہنیں پیا گھر سدھار چکی ہیں اور تین بھائیوں کے سَر پر بھی سہرا سج چکا ہے ، میں خاندان کی اکلوتی رکن ہوں جو میڈیا انڈسٹری میں آئی ۔
Geo-News-anchor-Hifza-chaudhary-lahore2 (2)
انہوں نے بتایاکہ ان کا نام والد نے رکھاجو مجھے بھی پسند ہے لیکن اگر خود نام رکھنا پڑتاتو ایمان رکھتی ۔ حفظہ چوہدری نے بتایاکہ میڈیا منیجمنٹ میں ماسٹرز کی ڈگری میری بہن شادی کی وجہ سے نہ کرسکی لیکن کامیاب ہوگئی اور پھر یہیں سے ٹی وی سکرین پر آنے کا شوق پیداہوا۔ایک سوال کے جواب میں ان کاکہناتھاکہ ڈگری کے دوران ہی فیملی کو پتہ تھا کہ میں میڈیا انڈسٹری اپناﺅں گی اور پھر والد صاحب نے بھی اجازت دیدی جو حرف آخر تھی ۔ اینکر نے بتایاکہ پہلی مرتبہ کیمرے کے سامنے آنے پر بہت ڈری ہوئی تھی اور آواز کانپ رہی تھی لیکن جلد ہی خوف پر قابو پاکر اعتماد کیساتھ بلیٹن مکمل کروایا۔
Geo-News-anchor-Hifza-chaudhary-lahore2 (1)
اینکر نے بتایاکہ اپنی پہلی تنخواہ کا پیسہ امی کے ہاتھ میں دیا لیکن انہوں نے وہ پیسے میری امانت کے طورپر محفوظ کرلیے ۔انہوںنے پچھتاوے کا اظہا ر کرتے ہوئے کہاکہ سی ایس ایس کرنا چاہتی تھی لیکن مصروفیات کی وجہ سے ایسا کچھ نہیں کرپائی اب دیسی سے لے کر چائنیز کھانے تک بے حد لذیذ بناتی ہوں۔خاتون نے انکشاف کیاکہ ڈراموں، فلموں اور کئی اشتہارات کی آفرز آئی ہیں لیکن معذرت کرلی ۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here