مسلمان حکمران جس نے اپنے کتے اور کتی کی شادی پر ہزاروں لوگوں کو بلالیا

0
936

نئی دہلی (پاکستان ٹوئنٹی فورسیون نیوز)تاریخ پر نظر ڈالیں تو پتا چلتا ہے کہ گئے وقتوں کے حکمران موجودہ حکمرانوں سے بھی گئے گزرے تھے، نواب آف جونا گڑھ مہابت خان رسول خان کو کتوں سے بہت محبت تھی جبکہ ریاست کے طول و عرض میں رعایا کا کوئی پرسان حال نا تھا۔ کہتے ہیں کہ نواب کے پاس 800 سے زائد کتے تھے جن میں سے ہر ایک کا علیحدہ کمرہ اور ملازم تھا۔ نواب کی پسندیدہ ترین کتیا کا نام روشن آراءتھا جسے بوبی نامی کتے سے پیار ہوگیا۔
نواب کو جب اس معاشقے کا علم ہوا تو وہ خوشی سے نہال ہو گیا اور اپنی محبوب کتیا کی دھوم دھام سے شادی کرنے کا فیصلہ کیا۔ وہ اس شادی کے لئے ایسا پرجوش تھا کہ اس وقت کے وائسرائے ہندوستان لارڈ ارون کو بھی دعوت دے ڈالی، لیکن انہوں نے آنے سے معذرت کرلی۔
شادی کے دن کتیا کو نہلا دھلا کر قیمتی پوشاک پہنائی گئی، اس کے گلے میں ڈھیروں زیور بھی ڈالا گیا اور پھر اسے چاندی کی پالکی میں بٹھا کر دربار میں لایا گیا۔ دولہا کتے کو بھی سونے کے کڑے اور ہار پہنایا گیا اور 250 کتوں پر مشتمل دستے اور فوجی بینڈ نے اس کا استقبال کیا۔ مورخین کہتے ہیں کہ اس دور میں اس شادی پر 22ہزار روپے خرچ ہوئے تھے، جو آج کے دو کروڑ روپے سے زائد ہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here