سہاگ رات کو مرد کو اپنی نئی نویلی دلہن کیساتھ بسترپر کیسا سلوک کرناچاہیے ؟ معمہ حل ہوگیا

0
61
bridal-room

کراچی (پاکستان ٹوئنٹی فورسیون نیوز)شادی کسی بھی فرد کی زندگی کا اہم ترین وقت ہوتا ہے اور شادی کی پہلی رات نئے نویلی جوڑے پرجنسی زندگی کا بھی دبائو ہوتا ہے جبکہ اس سے پہلے دونوں ہی مسلمان معاشرے میں اس عمل سے ناواقف ہوتے ہیںتاہم اس موقع پرپہلی ہی رات جنسی سفر کا آغاز کامیابی سے ہونا ایک غیرمناسب بات ہے ۔
خبروں کی ویب سائٹ پڑھ لو کے مطابق اپنے جیون ساتھی کو سمجھنے کا آغاذ کسی بھی قسم کی زبردستی کے ساتھ کرنے کے بجائے ایک دوسرے کو موقع دیں کہ قربت کے ان مرحلوں کو باہمی سمجھوتے اور خوش اسلوبی کے ساتھ طے کریں۔اللہ تعالی نے انسان کو جہاں دیگر بشری ضروریات کے ساتھ پیدا کیا ہے ان میں سے جنسی عمل بھی ایک ضرورت ہے جس کی تکمیل کے لیے اللہ نے شادی کے حلال عمل کا بھی تعین کیا ہے اور ان کے درمیان محبت پیدا کرتے ہوئے انہیں ایک دوسرے کا لباس قرار دیا ہے۔
جنسی عمل کے بارے میں یہ تاثر دیا جاتا ہے کہ یہ ایک انتہائی تکلیف دہ عمل ہے اوراسی وجہ سے لڑکیاںڈرتی ہیں کہ شادی ایک انتہائی تکلیف دہ عمل ہے مگر اس حوالے سے یہ بات جاننا ضروری ہے کہ اس عمل کو پہلی بار کرنے پر اگرچہ کسی حد تک تکلیف ہوتی ہے مگر وقت کے ساتھ یہ عمل تکلیف دہ نہیں رہتا۔رپورٹ کے مطابق ’حدیث نبویﷺ ہے کہ جب تم اپنی بیویوں کے قریب جاو¿ تو ان کے ساتھ اس طرح عمل کرو جیسے کسی نازک پرندے کے پاس جایا جاتا ہے یعنی آہستگی اور نرمی کے ساتھ‘۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here